‏وزیراعظم عمران خان کا دورہ چین انتہائی اہمیت کا حامل ہے ،اہم امور زیر بحث آئیں گے،پاکستان چین سے مزید سرمایہ کاری کیلئے کہے گا،اسدعمر کا ویڈیو پیغام میں اظہار

64

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی ترقی واصلاحات وخصوصی اقدامات اسدعمر نے کہا ہے کہ ‏وزیراعظم عمران خان کا دورہ چین انتہائی اہمیت کا حامل ہے جو پاک چین دوستی کی لازوال دوستی کا منہ بولتا ثبوت ہے،ہمارا مشن سی پیک کے ذریعے سرمایہ کاری کو مزید فروغ دینا اور خاص طور پر چینی سرمایہ کاروں کو بھرپور معاونت فراہم کرنا ہے۔

اپنے دورہ چین کے حوالے سے اپنے ویڈیو پیغام میں وفاقی وزیر اسد عمر نے کہا کہ چین کی پاکستان میں سرمایہ کاری کیلئے جامع دستاویزات تیار کی گئیں، چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کیلئے قائل کریں گے، اسدعمر نے کہا کہ وزیراعظم کا دورہ چین اہمیت کا حامل ہے،چین میں اہم امور زیر بحث آئیں گے، پاکستان چین سے مزید سرمایہ کاری کیلئے کہے گا۔

انہوں نے کہاکہ ‏پاکستان میں سرمایہ کاری کے مواقع کے حوالے سے تیار کی گئی پچ بک میں سیکٹر وائز تفصیلات شامل کی گئی ہیں ،کتاب میں پاکستان میں سرمایہ کاری کے حامل شعبوں اور حکومت کی جانب سے ان شعبوں میں فراہم کی جانے والی تفصیلات موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی وفد کے ارکان دورہ چین کے موقع پر یہ کتاب چینی سرمایہ کاروں اور کاروباری شخصیات کو پیش کریں گے۔ اس کتاب کا مقصد ملک میں سرمایہ کاری کے مواقع کو فروغ دینا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس دورے کو بہت اہمیت دی جارہی ہے ،پاک چین کی لازوال دوستی کو خصوصی اہمیت دی جارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں وفد چین کے صدر شی جن پنگ اور وزیراعظم لی جو پاکستان میں مزید سرمایہ کاری لانے کے لیے کہیں گے۔انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ اقتصادی تعلقات کو مزیدآگے بڑھائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ وزارت منصوبہ بندی اور سی پیک اتھارٹی نے ایک بہت عمدہ بک تیار کی ہے جس میں پاکستان کے تمام شعبوں کی نشاندہی کی گئی ہے کہ کون کون سے شعبوں میں چین کے سرمایہ کار سرمایہ کاری کر سکتے ہیں اور ان کو ہم کیاکیا مراعات دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ بک بہت محنت سے تیار کی گئی ہے اور میں وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سی پیک افیئرز خالد منصور کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ اس بک کی تیاری میں انہوں نے بہت محنت کی ہے اور اس بک میں ان تمام اہداف کو شامل کیا گیا ہے جس میں غیر ملکی سرمایہ کاری لائی جا سکے۔

Comments are closed.

Subscribe to Newsletter
close-link