پاک جاپان اقتصادی پالیسی ڈائیلاگ،دو طرفہ اقتصادی تعاون بڑھانے پر اتفاق

146

اسلام آباد:پاکستان اور جاپان نے دو طرفہ اقتصادی تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔پاک۔جاپان ساتویں اعلی سطحی اقتصادی پالیسی ڈائیلاگ جمعہ کو اسلام آباد میں منعقد ہوئے۔ وزارت اقتصادی امور کے سیکرٹری نور احمد پاکستانی جبکہ جاپانی وفد کی قیادت جاپان کے سینئر نائب وزیر برائے امور خارجہ ہیروشی سوزوکی کر رہے تھے۔

جاپان میں پاکستان کے سفیر امتیاز احمد اور پاکستان میں جاپان کے سفیر کنینوری میتسودا نے بھی ڈائیلاگ میں شرکت کی۔ اجلاس میں وزارت خزانہ ، امور خارجہ ، تجارت ، صنعت و پیداوار ، بیرون ملک مقیم پاکستانی اور انسانی وسائل کی ترقی ، انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی مواصلات ، نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ ، اور سرمایہ کاری بورڈ کے سینئر افسران نے بھی شرکت کی۔

فریقین نے دوطرفہ اقتصادی تعلقات کی موجودہ صورتحال کا جائزہ لیا اور مختلف شعبوں میں باہمی فائدہ مند معاشی تعاون بڑھانے کے عزم کا اعادہ کیا۔ جاپان نے پاکستان کے جغرافیائی اقتصادی محل و قوع کیساتھ رابطوں کی صلاحیت اور خطے میں ٹرانزٹ ٹریڈ کے ایک مرکز کی حیثیت سے،پاکستان کو جاپانی سرمایہ کاروں کے لئے پرکشش ملک کے طور پر تسلیم کیا۔اقتصادی تعاون بڑھانے کی غرض سے تجارتی خسارے کومتوازن کرنے کے لئے پاکستان سے برآمدات میں اضافے ، مراعات رعایتی قرضوں کی بحالی اور سالانہ گرانٹس میں اضافہ ، غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری کو فروغ دینے ، ٹیکنالوجی کے تبادلے ، ٹیکسٹائل اور چمڑے ، گھریلو الیکٹرانکس ، زرعی مصنوعات اور فوڈ پروسیسنگ ، آٹو سیکٹر اور الیکٹرک گاڑیاں ، اور پاکستان کی برآمدات پر مبنی صنعتوں کے مشترکہ منصوبوں کے حوالے سے امور زیر بحث لائے گئے۔

سرمایہ کاری تعاون کے شعبے میں پاکستان نے جاپان کو تجویز پیش کی کہ وہ تجارتی تعاون کے لئے پاکستان کے خصوصی اقتصادی زون میں مواقع سے فائدہ اٹھائیں اور یہاں تک کہ جاپانی سرمایہ کاروں کے لئے ایک ملک کو مخصوص معاشی زون کی بھی پیش کش کی۔ انسانی وسائل کے تعاون کے سلسلے میں فریقین نے جاپان کو ہنر مند اور نیم ہنر مند افرادی قوت کی برآمد میں بے پناہ صلاحیتوں کے وجود کو تسلیم کیا۔

سیکریٹری اقتصادی امور نور احمد نے کہا کہ پاکستان اور جاپان کے مابین اقتصادی تعاون کا آغاز 1952 میں ہوا تھا اور اس میں بتدریج اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان سماجی و معاشی انفراسٹرکچر ، سلامتی اور استحکام ، اربن،صاف پانی تک رسائی ، پانی کی تقسیم کے نیٹ ورکس و سیوریج نظام ، تعلیم اور صحت کی اپ گریڈیشن کے شعبوں میں جاپانی حکومت کے تعاون کو تسلیم کرتی اور سراہتی ہے۔

جاپان کے سینئر نائب وزیر برائے امور خارجہ سوزوکی ہیروشی نے دونوں ممالک کے مابین طویل المدتی عزم اور دوستی کے عزم کا اعادہ کیا اور 2011 کے دوران جاپان میں بدترین سونامی اور زلزلے کے دوران پاکستانی کمیونٹی کی حمایت کو سراہا۔

انہوں نے پاکستان کو اپنے اندرونی نظام اور گورننس کے معیار کیساتھ ساتھ کاروباری ماحول کو اپ گریڈ کرنے کا مشورہ دیا۔ جاپانی وفد نے حکومت پاکستان کے اصلاحاتی ایجنڈے کو سراہا اور بہتر مالی نظم و نسق ، سماجی و اقتصادی ترقی اور پاکستان کو خود کفیل بنانے میں مکمل حمایت کا یقین دلایا

Comments are closed.

Subscribe to Newsletter
close-link