ملک میں صدارتی نظام اور ایمرجنسی نافذ کرنے کی باتیں محض افواہیں ہیں، پانچویں سال حکومت پر سیاسی حملہ اپوزیشن کی خودکشی ہو گی، وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد

155

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ ملک میں صدارتی نظام اور ایمرجنسی نافذ کرنے کی باتیں محض افواہیں ہیں، وزیراعظم عمران خان ملک کو درپیش مہنگائی اور معیشت سمیت تمام مسائل کو حل کرنے کیلئے دن رات محنت کر رہے ہیں، نااہل، نکمی اور نکھٹو اپوزیشن کے پاس موجودہ حکومت کو گرانے کی ایوان میں اور نہ ہی عوام کی طاقت ہے، پانچویں سال حکومت پر سیاسی حملہ اپوزیشن کی خودکشی ہو گی۔

بدھ کو نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اپوزیشن پہلے استعفوں اور پھر عدم اعتماد سے بھاگی، 23 مارچ کو آ کر شوق پورا کر لیں یہ لوگ ایک دن میں ہی واپس چلے جائیں گے، دھرنا دینا مشکل کام ہے، اپوزیشن نے اگر مارچ کیا بھی تو 24 مارچ کو یہ لوگ واپس چلے جائیں گے کیونکہ اپوزیشن زیادہ دیر تک سڑکوں پر نہیں رہ سکتی، اپوزیشن ٹھس ہو چکی ہے اس میں موجودہ حکومت کو گرانے کی جان نہیں ہے، حکومت کو اپوزیشن سے کوئی خطرہ نہیں ہے اور بغیر کسی رکاوٹ اپنی آئینی مدت پوری کرے گی، حقیقت یہ ہے کہ اپوزیشن بھی ذہنی طور پر اگلے انتخابات کی تیاری کر رہی ہے۔

شیخ رشید احمد نے کہا کہ اپوزیشن کا ایک ہی ایجنڈا ہے کہ کسی نہ کسی طریقے سے سول اور عسکری قیادت کے درمیان تعلقات خراب ہوں لیکن ان کو سمجھ آ جانی چاہیے کہ سول اور عسکری قیادت ایک پیج پر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ ن اور پاکستان پیپلزپارٹی کے قائدین کی بدعنوانیاں اور منی لانڈرنگ عوام کے سامنے بے نقاب ہو چکی ہیں، شہباز شریف اپنے بڑے بھائی سے زیادہ کرپٹ ہیں، شہباز شریف اور حمزہ شہباز کے خلاف سنگین مقدمات ہیں وہ سزا سے نہیں بچ سکیں گے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ شریف فیملی میں مائنس فور ہو گا، نواز شریف، مریم نواز، شہباز شریف اور حمزہ شہباز کا ملکی سیاست میں کوئی مستقبل نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف حکومت بدعنوان عناصر کے خلاف احتساب کیلئے اقتدار میں آئی ہے، وزیراعظم عمران خان ملک سے کرپشن کے خاتمے اور بدعنوان عناصر کے خلاف احتساب کے معاملے پر کبھی ہار نہیں مانیں گے۔

تحریک طالبان پاکستان سے متعلق ایک سوال کے جواب میں شیخ رشید احمد نے کہا کہ ٹی ٹی پی کے ساتھ کوئی بات چیت نہیں ہو رہی ہے، ہم قومی سالمیت کے معاملے پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے، پاکستان نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں 80 ہزار سے زائد جانوں کی قربانی دی، دہشتگردی اور انتہاپسندی کا خاتمہ کر کے ہی دم لیں گے۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کیلئے چین اور امریکہ دونوں اہم ہیں اور ہم دونوں کے ساتھ اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں، پاکستان اور چین ایک دوسرے کیلئے لازم و ملزوم ہیں۔

Comments are closed.

Subscribe to Newsletter
close-link