صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے وفاقی محتسب کے فیصلے کے خلاف شہری کی اپیل منظور کر لی،این او سی فیس کی مد میں وصول کردہ رقم شکایت کنندہ کو واپس کرنے کا حکم

106

اسلام آباد۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے وفاقی محتسب کے فیصلے کے خلاف شہری کی اپیل منظور کرتے ہوئے وفاقی ترقیاتی ادارہ (سی ڈی اے) کی جانب سے این او سی فیس کی مد میں وصول کردہ 11 لاکھ روپے سے زائد کی رقم شکایت کنندہ کو واپس کرنے کا حکم دے دیا۔

صدر مملکت نے شہری کی شکایت پر سی ڈی اے کو سی این جی اسٹیشن کے لئے این او سی فیس کی مد میں ادا کردہ رقم واپس کرنے کا فیصلہ دیا ہے۔ ایوان صدر کے میڈیا ونگ کے مطابق شکایت کنندہ میجر (ر) مسعود باجوہ نے اسلام آباد میں سی این جی اسٹیشن کے قیام کیلئے 2007میں این او سی فیس جمع کرائی تھی تاہم متعلقہ اداروں سے این او سی وقت پر نہ ملنے پر شکایت کنندہ نے رقم واپسی کا مطالبہ کیا تھا۔ شہری نے رقم واپس نہ ملنے پر سی ڈی اے کے خلاف وفاقی محتسب کو سال 2020ء میں درخواست جمع کرائی،

وفاقی محتسب نے شکایت کنندہ کی درخواست زائدالمیعاد ہونے اور سی ڈی اے بورڈ کے این او سی فیس کو ناقابل واپسی قرار دینے کے فیصلے کی بنیاد پر مسترد کر دی تھی۔ اس پر شہری نے صدر مملکت کو اپنے حق کے حصول کے لیے وفاقی محتسب کے فیصلے کے خلاف اپیل کی تھی۔

صدر مملکت نے اس حوالے سے اپنے فیصلے میں قرار دیا کہ کسی شہری کی خاص مقصد کیلئے جمع کرائی ہوئی رقم قانون کی عدم موجودگی میں ضبط نہیں کی جا سکتی۔ صدر مملکت نے کہا کہ سی ڈی اے بورڈ کا فیصلہ 2013ء سے پہلے کے کیسز پر لاگو نہیں ہوتا، 2007ء میں بورڈ کا متعلقہ قانون وجود نہیں رکھتا تھا لہذا اس معاملے پر اطلاق نہیں ہوتا۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی محتسب کے فیصلے میں معاملے کے ان پہلوؤں کو نظر انداز کیا گیا ہے۔ صدر مملکت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ آئین کے مطابق کسی بھی شخص کو خلاف قانون اپنے مال سے محروم نہیں کیا جاسکتا،

آئین پاکستان ہر شخص کو قانون کے مطابق منصفانہ سلوک کرنے کی یقین دہانی کراتا ہے۔ صدر مملکت نے اپنے حکم نامے میں وفاقی محتسب کا فیصلہ مسترد کرتے ہوئے شکایت کنندہ کو این او سی فیس کی مد میں وصول کی گئی رقم واپس کرنے کی ہدایت کی ہے۔

Comments are closed.

Subscribe to Newsletter
close-link