جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کےلئے جلد مزید پیش رفت کروں گا۔شاہ محمودقریشی

186

ملتان: وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ جنوبی پنجاب صوبہ کا قیام تحریک انصاف کے منشور کا حصہ ہے۔صوبے بنانے کیلئے ہمارے پاس دو تہائی اکثریت نہیں۔

پارٹی چیئرمین عمران خان کی ہدایت پر پی پی ‘ ن لیگ دونوں جماعتوں کی قیادت کو خط لکھے کہ آئیں اور مل بیٹھ کر صوبہ کی تشکیل کیلئے بات چیت کریں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتے کے روز ملتان میں این اے 156 کی مختلف یونین کونسلوںمیں استقبالیہ تقریبات سے خطاب اور وفود سے ملاقات کے دوران کیا۔ شاہ محمودقریشی نے مزید کہاکہ ابھی تک دونوں جماعتوں کی جانب سے کوئی جواب سامنے نہیں آیا ۔

جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے جلد ہی مزید پیش رفت کر رہا ہوں۔ کئی دہائیوں تک باریاں لینے والی جماعتوں نے جنوبی پنجاب کے عوام کیلئے کیا کیا؟ پی پی ن لیگ چاہتے تو اپنے دور اقتدار میں جنوبی پنجاب صوبے کیلئے بہت کچھ کرسکتے تھے ۔

انہوں نے کہاکہ پی پی اورن لیگ اپنے دور اقتدار میں صوبہ تو در کنار سیکرٹریٹ بھی نہ بنا سکے۔ہم نے سیکرٹریٹ بنا کر جنوبی پنجاب صوبے کی بنیاد رکھ دی ہے۔جسے کوئی بھی رول بیک نہیں کرسکتا۔ جنوبی پنجاب کے عوام کی محرمیوں کا احساس ہے۔

جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے قیام سے یہاں ترقی کا نیا دور شروع ہوا ہے مختلف محکمہ جات کے سیکرٹری یہاں لوگوں کے مسائل کے حل کے لئے موجود ہیں اور ترقی کا سفر تیزی سی جاری ہے۔

انہوں نے کہاکہ اپوزیشن میں بیٹھے مایوس لوگ کبھی صدارتی نظام ‘ کبھی عدم اعتماد اور کبھی اسمبلیوں کے خاتمے کی قیاس آرائیاں کرتے ہیں، یہ وہ لوگ ہیں جو نظام کے مخالف ہیں، یہ وہ لوگ ہیں جن سے ملکی ترقی ہضم نہیں ہو رہی۔شاہ محمودقریشی نے کہا کہ میں آج ایک بارپھر واضح کر دیناچاہتاہوں وزیر اعظم عمران خان کو عوام نے پانچ سال کے لیے حکومت کا مینڈیٹ دیا ہے،

عمران خان بطور وزیر اعظم اور تحر یک انصاف کی حکومت آئینی مدت پوری کر یگی اور عام انتخابات بھی اپنے وقت پر ہی ہوں گے اور آنے والا وقت بھی تحریک انصاف کا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرونا وباءکے شدید اثرات کے باوجود ہماری حکومت کی معاشی پالیسیوں کے نتائج سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں۔

ہماری حکومت کی پالیسیوں کو عالمی سطح پر سراہا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ مہنگائی ہماری حکومت کیلئے ایک بہت بڑا چیلنج ہے ۔ مہنگائی کے خلاف جنگ لڑ رہے ہیں جلد ہی اس پر قابو پا کر عوام کے سامنے سروخرو ہونگے ۔انہوں نے کہاکہ ملک سے کرپشن کا خاتمہ اور لٹیروں سے لوٹی ہوئی دولت کی واپسی وزیراعظم عمران خان کامشن ہے اور آ ج بھی وزیراعظم عمران خان اسی مشن پر کار بندہیں۔

شاہ محمودقریشی نے کہا کہ ہماری حکومت کی سب سے بڑی کامیابی یہی ہے کہ ا ن ساڑھے تین سالوں میں کسی حکومتی عہدیدار کا کرپشن کا کیس سامنے نہیں آیا ۔ وزیراعظم عمران خان کرپشن کے خاتمے کیلئے بلا امتیاز کارروائی پر یقین رکھتے ہیں۔ تحریک انصاف کی حکومت کرپشن سے پاک نظام کا قیام چاہتی ہے۔ اور یہ صرف اسی صورت میں ممکن ہے جب ملک کا حکمران دیانتدار اور ایماندار ہو ،

وزیراعظم عمران خان خلوص نیت اور دیانتداری سے ملکی ترقی کیلئے کوششیں کررہے ہیں۔ ملک اور قوم کی بہتری کیلئے سخت فیصلے کرنا پڑے جس کے دورس نتائج سامنے آئیں گے۔انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی پر یقین رکھتی ہے۔ پنجاب میں نئے بلدیاتی نظام سے عوام کو نہ صرف ریلیف ملے گا بلکہ ان کے مسائل نچلی سطح پرحل ہونگے۔

پنجاب کے برعکس سندھ میں بلدیاتی نظام پر اپوزیشن کی تمام جماعتوں کو اعتراض ہے۔ سندھ کے اس بلدیاتی نظام سے عوام کے مسائل حل ہونے کی بجائے مسائل میں اضافہ ہوگا۔ انہوں نے پی ٹی آئی کارکنوں پر زور دیا کہ وہ بلدیاتی انتخابا ت کی تیاری کریں۔کارکن بھر پور تیاری کے ساتھ بلدیاتی انتخابات کیلئے میدان میںاتریں ۔ بلدیاتی انتخابات میں تحریک انصاف کو بھر پور کامیابی ملے گی۔

Comments are closed.

Subscribe to Newsletter
close-link