اقوام متحدہ کا امن سازی کمشین غیر حل شدہ تنازعات کی بنیادی وجوہات کے حل کے لیے کردار ادا کرے، اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم

89

اقوام متحدہ: پاکستان نےتنازعات سے متاثرہ ممالک میں امن کی کوششوں کی حمایت کرنے والےا قوام متحدہ کے امن سازی کمیشن (پی بی سی)پر زور دیا ہے کہ وہ تنازعات اور کشیدگی کی بنیادی وجوہات کے حل میں اپنا بھرپور کردار ادا کرے۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے کمیشن کے چھٹے سیشن میں اپنے خطاب کے ابتدائی کلمات میں کہا کہ تنازعات کی بنیادی وجوہات غربت، عدم مساوات،

قلیل وسائل پر مسابقت، ماحولیاتی انحطاط اور غیر حل شدہ تنازعات کو حل کرنے کو ترجیح دی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ تمام عوام قوموں کے درمیان اور ان کے اندر جھگڑے کی وجوہات ہیں لہذا کمیشن ان بنیادی وجوہات کے حل میں تعاون کے لیے مزید کردار ادا کر سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے امن سازی کمیشن (پی بی سی )کا مشاورتی کردار اسے سلامتی کونسل میں قیام امن، تنازعات کے حل اور اہم مسائل سے متعلق ٹھوس معلومات اور سفارشات پیش کرنے کی اجازت دیتا ہے۔انہوں نے کہا کہ تنازعات کی نوعیت بدل گئی ہے،مقامی تنازعات میں غیر ملکی مداخلت بڑھ گئی ہے اور اب اندرونی تنازعات کے بھی سرحد پار اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اس حقیقت کو دیکھنا ہے کہ قدرتی وسائل کے حصول میں مالی مفادات شامل ہوں۔ انہوں نےاپنی بنگلہ دیشی ہم منصب رباب فاطمہ کو کمیشن کی چیئرپرسن منتخب ہونے پر مبارکباد دی، جو 2005 میں اس کے قیام کے بعد یہ عہدہ حاصل کرنے والی پہلی خاتون ہیں۔

پاکستان اسمشاورتی باڈی کا بانی رکن ہے۔ پاکستانی مندوب منیر اکرم نے کہا کہ کمیشن نے اپنےرابطوں اور اپنے وعدوں کے جغرافیائی دائرہ کار دونوں کو بڑھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمیشن کو اقوام متحدہ کے اداروں، نجی شعبے اور پیس بلڈنگ فنڈ کے ساتھ اپنا بھرپور کردار ادا کرنا چاہیے اور موجودہ تعاون کو طویل مدتی وعدوں میں تبدیل کرنا چاہیے۔

Comments are closed.

Subscribe to Newsletter
close-link